جمہوریت اورفلاحی معاشرہ

جمہور یت میں حقوق اورآزادیاں


ناروے میں جمہوریت ہے۔ لفظ جمہوریت اصل میں یونانی زبان سے آیا ہے اوراس کا مطلب ہے عوام کی حکومت۔ ناروے میں لوگ پارلیمنٹ ، صوبائی اوربلدیاتی اداروں میں سیاسی جماعتوں کے انتخاب کے ذریعے حکومت کرتے ہیں۔ وہ جماعت یا وہ جماعتیں جو انتخابات میں زیادہ ووٹ حاصل کریں انہی کے پارلیمنٹ ، صوبائی اور بلدیاتی انتظامیہ میں زیادہ نمائندے ہوتے ہیں۔ اس طرح اکثریت فیصلے کرتی ہے۔ لیکن ایک اہم اصول یہ ہے کہ ا کثر یت لائحہ عمل کے تعین میں اقلیت کی رائے کو بھی اہمیت دے۔

: جمہوریت میں شہری بعض آزادیاں اور حقوق رکھتے ہیں

انسانی حقوق

FN-flagget FN-bygningen i New York
انسانی حقوق سب کے لئے ہیں اور یہ حقوق ہم اس لئےرکھتے ہیں کہ ہم انسان ہیں – اس لئے نہیں کہ ہم دنیا میں مخصوص جگہوں پر رہتے ہیں، یا ہمارا کسی خاص مذہب سے یا کسی خاص نسل سے تعلق ہے۔ اسی لئے ہم کہتے ہیں کہ انسانی حقوق سب کے لیے ہیں۔ انسانی حقوق سب سے پہلے فرد اورریاست میں تعلق کے بارے میں کچھ کہتے ہیں۔

1948 میں اقوامِ متحدہ کا انسانی حقوق کا عالمی منشور منظورہوا ۔
انسانی حقوق کا عالمی منشور تمام انسانوں کے لیے ہے اور باتوں کے علاوہ اس میں درج ہے کہ

  • تمام انسان آزاد اور حقوق وعزّت کے اعتبار سے برابر پیدا ہوئے ہیں
  • تمام انسانوں کے لئے قطع نظر مذہب ،نسل، جنس،سیاسی سوچ، قومیّت ایک جیسے انسانی حقوق ہیں
  • سب انسان آزادی اور ذاتی تحفظ کا حق رکھتے ہیں
  • ہر قسم کا تشدّد ممنو ع ہے
  • تمام انسان قانونی تحفظ کا حق رکھتے ہیں
  • تمام انسانوں کواپنےملک میں سیاسی صورتحال پرآزادانہ اور خفیہ رائے دہی/انتخاب کے ذریعےاثرانداز ہونے کا حق ہے

ناروے میں انسانی حقوق کےعالمی منشور کے بہت بڑے حصے کو قوانین میں شامل کیا گیا ہے۔

مساوات

Personar i rullestol Homofilt par To eldre damer på tur Fem barn sammen

روا ئتی حوالے سے جنسی مساوات کی اصطلاح کا مطلب عورتوں اور مردوں میں ایک جیسے حقوق اور مواقع ہے۔ آج یہ اصطلاح بہت وسیع معنوں میں استعمال ہوتی ہے۔ تمام انسان – عمر، نسل ، قابلیّت ، جنس، مذہب، جنسی میلان سے قطع نظر – مساوی حقوق ر کھتے ہیں۔
اور باتوں کےعلاوہ مساوات کا مطلب حصّہ لینے اور اثرانداز ہونے کے لئے ایک جیسے مواقع ہونا، ذمّہ داری اور بوجھ میں منصفانہ تقسیم ہونا، اور یہ کہ انسان خود کو کسی جبر یا زیادتی سے محفوظ سمجھے۔

آزادیِ اظہارِ رائے

کسی شخص کو مقدمہ چلائے بغیر قید نہیں کیا جا سکتا۔ مقدّ مے کا مطلب یہ ہے کہ غیر جانب دار جیوری کا کسی شخص کے مجرم یا بے گناہ ہونے کا فیصلہ ہوتا ہے اور یہ کہ غیر جانبدار جج ملزم کے قصور وار ہونے کی صورت میں سزا کا تعین کرتےہیں۔ لیکن فوجداری مقدّمہ شروع ہونے سے پہلے پولیس کسی مجرمانہ مقدّمے کی تفتیش کے لئے لوگوں کو حوالات میں رکھ سکتی ہے۔

آزادیِ اظہارِ رائے کا اطلاق افراد ، ٹی وی ، ریڈیو اور اخبارات پر ایک جیسا ہے۔

قانونی تحفظ

ناروے میں شہریوں کو اچھا قانونی تحفظ حاصل ہے۔اس کا مطلب اور باتوں کے علاوہ یہ ہے کہ:

  • کسی شخص کو مقدمہ چلائے بغیر قید نہیں کیا جا سکتا۔ مقدّ مے کا مطلب یہ ہے کہ غیر جانب دار جیوری کا کسی شخص کے مجرم یا بے گناہ ہونے کا فیصلہ ہوتا ہے اور یہ کہ غیر جانبدار جج ملزم کے قصور وار ہونے کی صورت میں سزا کا تعین کرتےہیں۔ لیکن فوجداری مقدّمہ شروع ہونے سے پہلے پولیس کسی مجرمانہ مقدّمے کی تفتیش کے لئے لوگوں کو حوالات میں رکھ سکتی ہے۔
  • تمام ملزمان اپنے دفاع کا حق رکھتے ہیں۔
  • عدا لتیں خود مختا ر ہیں۔ اس کا مطلب ہے کہ وہ اپنے کام میں سیاستدانوں ، مِیڈیا اور دوسرے اداروں کو اثر اندا ز نہیں ہونے د یتیں۔ پارلیمنٹ، حکومت یا دوسرے حکام عدالتی فیصلوں پر دخل اندازی نہیں کر سکتے ۔
  • قوانین پیچھے پلٹنے کی طاقت نہیں رکھتے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ جْرم کے ارتقاب کے وقت لاگو قانون کو ہی قصور اور سزا کے تعین کے لئے استعمال کیا جائے گا۔

آزادیِ مذہب و عقیدہ

آزادیِ مذہب و عقیدہ کا مطلب ہے کہ لوگ اپنے مذہب یا نظریہ حیات کے آزادانہ ا نتخاب اور اپنے مذہب یا نظریہ حیات پر آزادانہ عمل کرنے کا حق رکھتے ہیں ۔ کسی شخص کودوسروں کو کسی مذہب یا مذہبی جماعت میں شامل کرنے یا نکالنے کا حق حاصل نہیں۔ 15سال کی عمر کے بعد ہر شخص کو خود مذہبی جماعتوں یا نظریہ حیات کو ترک کرنے یا ان میں شامل ہونے کا حق حاصل ہے قطع نظر دوسروں کی سوچ کے ۔ کسی کو اس کی مذہبی وابستگی کی وجہ سے ایذا رسانی یا سزا کی اجازت نہیں۔

جتنا اہم ہرکسی کے لئے اپنےمذہب اور نظریہ حیات کے ا نتخاب کا حق ہے اسی طرح ہمیں کسی مذہب اور نظریہ حیات سے تعلق نہ رکھنے کی بھی ایسی ہی آزادی ہے۔

تنظیمی آزادی

تنظیمی آزادی کی کئی صورتیں ہیں، چند اہم درجِ ذیل ہیں :

  • انسان کو سیاسی جماعتوں اور غیر سرکاری تنظیموں کا رْکن بننے کا کسی تکلیف اور سز ا کے خوف کےبغیر حق حاصل ہے۔
  • انسان کو مزدوروں کی انجمنوں کا رْکن بننے کا کسی تکلیف اور سزا کے خوف کےبغیر حق حاصل ہے۔ بعض صورتوں میں ہڑ تال کا حق بھی ہوتا ہے۔
  • انسان کو اپنے خیالات کے اظہار کے لئے قانونی مظاہروں کا حق بھی ہے۔

حقائق

ووٹ کا حق

  • ناروے میں حق رائے دہی کی عمر18سال ہے۔
  • پارلیمنٹ کے ا نتخابات میں ووٹ ڈالنے کے لئے آپ کا نارویجن شہری ہونا ضروری ہے۔
  • صوبائی اور بلدیاتی انتخابات میں ووٹ ڈالنے کے لئے آپ کا انتخابات سے پہلے گزشتہ تیں سالوں سے ناروے میں رہائش پذیر ہونا ضروری ہے۔
  • ناروے میں 1913ء میں عورتوں کو ووٹ کا حق ملنے سے حق رائے دہی سب کے لئے ہے۔

185§ فوجداری قانون نسلی تعصب کا پیرا گراف

تعصّبانہ یا نفرت انگیزاظہار سےمراد کسی کوڈرانا، توہین کرنا یا نفرت پھیلانا، ایزارسانی یا تضحیک کرنا ہےان کے

a رنگ نسل یا قومیت کی بنا ‎ پر ،

b مذہب یا نظریہ حیات کی وجہ سے،

c ہم جنسی رحجان، رہن سہن اورانداز فکر کی وجہ سے،

d جسمانی معزوری کی وجہ سے،

نسلی تعصّب کےپیراگراف پر بہت بحث ہوتی ہے۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ اسے ختم کر دیا جائے، کیوںکہ ان کے خیال میں یہ آزادیِ اظہارِ رائے کی مخالفت کرتا ہے۔ بہت کم لوگوں کو اس پیراگراف کے مطابق سزا ہو ئی ہے۔

ء 2011 جولائی 22

ء ناروے کی تاریخ میں ایک یادگار دن ہے۔ اس دن ناروے تشدّد کا شکار ہؤا۔ 2011 جولائی اوسلو اوسلو میں حکومتی عمارت کے پاس بم پھٹنے سے آٹھ افراد جاں بحق ہوئے اور اْتوئیا جزیر ےپر نوجوانوں کے ایک سیاسی اکٹھ میں 69 افراد کو گو لیوں سے قتل کیا گیا۔ اس کے علاوہ بہت سے لوگ زخمی ہوئے۔ دونوں جگہوں پر کاروائی ایک ہی شخص نے کی۔