جمہوریت اورفلاحی معاشرہ

معیشت

تمام ملازمین جو سالانہ ٹیکس سے استثنا ء/ چھوٹ کی حد سے زیادہ کماتے ہیں ، وہ ٹیکس ادا کرتے ہیں۔ ٹیکس کا زیادہ حصّہ اس بلدیہ کو ملتا ہے جس میں ملازم سکونت پذیر ہے اور کچھ ضلعی بلدیہ اور ریاست کو ملتا ہے۔بڑھاپے کی پنشن ، بےروزگاری الاؤنس اور دوسرے مالی مدد وصول کرنے والے بھی ٹیکس ادا کرتے ہیں۔ کاروباری ادارے / کمپنیاں ریاست کو ٹیکس ادا کرتےہیں۔

ہم تمام اشیاء اور خدمات کے لئے بھی حکومت کوایک محصول ادا کرتے ہیں اسے( .mva moms ) بِکری ٹیکس کہتے ہیں۔ اس کی عام شرح 25 فیصد ہے لیکن غذائی اشیاء پر 15 فیصد ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ جو رقم آپ کسی چیز کے لئے ادا کرتے ہیں اس کا کچھ حصّہ ٹیکس ہے جو ریاست کو ملتا ہے۔ بِکری ٹٰیکس ریاست کی آمدنی کا ایک اہم ذریعہ ہے۔ ٹیکس کی مجموعی سرکاری آمدنی کا 20 فیصد سے زیادہ حصّہ ( .mva moms ) بِکری ٹیکس سے حاصل ہوتا ہے۔

نارویجن فلاحی ریاست کی کامیابی کے لئے ایک اہم شرط زیادہ سے زیادہ شہریوں کا روزگار میں ہونا ہے تا کہ وہ ٹیکس کی ادائیگی کے ذریعے اس نظام میں حصّہ لے سکیں۔ ریاست کی آمدنی اس کے اخراجات سے زیادہ ہونی چاہئے۔

نارویجن معاشرے میں ریاست بھی بعض فلاحی سہولیات کی ذمّہ دار ہے، مثلاً ہسپتالوں کا انتظام ۔ لیکن فلاحی سہولیات کی ذمّہ داری کا زیادہ حصّہ بلدیات کا ہے۔

 ریاست کی آمدنی

بلدیات کی آمدنی

حقائق

ٹیکس اور محصولات

تمام ٹیکس د ہندگان کو ان کی ٹیکس کی ادائیگی سے خود بخود کم سے کم رعایت /چھوٹ دی جاتی ہے۔ اس سےٹیکس کی کل ادائیگی والی رقم میں کمی ہو جاتی ہے۔ آج کم سے کم رعایت کی رقم کے بارے میں آپ ٹیکس کے ادارے کے صفحات پر دیکھ سکتے ہیں۔
کم سے کم رعایت کی رقم، ٹیکس کے ادارے کے نیٹ کاصفحہ ۔ www.skatteetaten.no/no/Tabeller-og-satser/Minstefradrag

  • نارویجن فلاحی ریاست بنیادی طور پر ٹیکسز اور محصولات ے چلتی ہے۔
  • ٹیکسز اور محصولات کی آمدنی فلاحی سہولیات اور فلاحی ریاست کی کارکردگی کے لئے بہت اہم ہیں