صحت

صحت کےمختلف انتظامات

ذاتی ڈا کٹر کا انتظام

تمام شہریوں کو اپنا ذاتی ڈاکٹررکھنے کا حق حاصل ہے۔ بیماری کی صورت میں سب سے پہلے آدمی کو اسی ذاتی ڈاکٹر سے رابطہ کرنا پڑتا ہے۔ ذاتی ڈاکٹراس بات کا پابند ہے کہ وہ اپنے مریضوں کی دوسروں سے پہلے مدد کرے۔ ذاتی ڈاکٹر ہی مریضوں کو دوسری مخصوص طبی سہولتوں کے لئے حوالہ دیتا ہے۔

ڈاکٹر صیغہ رازداری کا پابندہوتا ہے اور کسی دوسرے شخص کومریض کی اجازت کے بغیر ڈاکٹر اور مریض کے مابین گفتگو کے بارے میں نہیں بتا سکتا۔

دوا خانہ

دواخانے دوائیاں بیچتے ہیں اورصحت سے متعلق مشورے اور دوائیوں سے متعلق معلومات و مشاورت دیتے ہیں۔ اکثردوائیاں صرف دواخانوں سے خریدی جا سکتی ہیں۔ بعض دوائیاں جیسے درد کی شدّت کم کرنے والی دوائیاں آپ عام دوکانوں اور پٹرول پمپوں پر بھی خرید سکتے ہیں۔ دوائیوں کی قیمتیں ہر دواخانے اور ہردوکان میں علیٰحدہ علیٰحدہ ہو سکتی ہیں۔

بہت سی ادویات کےلئے رسید کا ہونا ضروری ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ ڈاکٹر سے ملے بغیر آپ یہ دوا نہیں خرید سکتے۔ ڈاکٹر کو ایک رسید لکھنی پڑتی ہے جس پہ دوائی کا نام اوراستعمال کا طریقہ درج ہوتا ہے۔

نیلی رسید پہ دوائیاں

اگر آپ کسی مہلک بیماری میں مبتلا ہوں جس کے لئے طویل علاج کی ضرورت ہو، اس کا مطلب یہ ہےکہ ایسی بیماری جو لمبا عرصہ رہے اور جس کے علاج کے لئے دوائیاں یا دوسری امدادی اشیاء سال میں کم از کم تین مہینوں تک استعمال کرنا پڑیں تو آپ کونیلی رسید پہ دوائیاں مل سکتی ہیں۔ جب آپ کو نیلی رسید پہ دوائی ملتی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ آپ دوائی کی پوری قیمت ادا نہیں کرتے۔ آپ صرف اس کے ذاتی حصے کی ادائیگی کرتے ہیں جب کہ اخراجات کے زیادہ حصّے کی ادائیگی ریاست کرتی ہے۔

فری کارڈ کے حصول کے لئے دوائیوں کے لئے ذاتی حصے کی ادائیگی کو ڈاکٹر کےلئے ذاتی حصے کی ادائیگی کے ساتھ شمار کیا جاتا ہے۔

Egenandel medisiner på blå resept

دانتوں کا ڈاکٹر/ ڈینٹسٹ

بچوں اور نوعمروں کو 18 سال کی عمر تک دانتوں کے معائنے کے لئے وقفے وقفے سے بلایا جاتا ہے۔ اور اس علاج کی ادائیگی سرکاری طور پر کی جاتی ہے۔ 18اور 20 سال کے نوعمر دانتوں کے علاج کی25 فیصد ادائیگی کرتے ہیں، جب کہ 75فیصد ادائیگی سرکاری حصّے سے ہوتی ہے۔ 20 سال سے زیادہ عمر کے بالغ افراد دانتوں کےعلاج کی ساری ادائیگی خود کرتے ہیں۔ بالغ افراد کو خود دانتوں کے کسی ڈاکٹر سے رابطہ کرنا پڑتا ہے اورلوگ عموماًسال میں ایک مرتبہ معائنے کے لئے دانتوں کے ڈاکٹرکے پاس جاتے ہیں۔

Egenandel hos tannlege for ungdom 18-20 år

اگر ایک بچے یا نوعمرکو دا نتوں کی ترتیب درْست کروانی ہو تو ذاتی حصے کی ادائیگی والدین کو کرنی پڑتی ہے۔

Jente med tannregulering

ہسپتال میں داخل ہونا

ہسپتال میں داخل ہونا مفت ہے۔ ہسپتال میں علاج ، قیام اور خوراک کے اخراجات سرکاری ادائیگی سے ہوتے ہیں۔

اگرہسپتال میں داخل ہونے کا پہلے سے طے ہوتو آپ ہسپتال کا ا نتخاب کر سکتے ہیں۔ علاج کے لئے وقت کے ا نتظار میں فرق ہو سکتا ہے اس لئے بہتر ہے کہ آپ اس ویب سائیٹ پر معلومات حاصل کر لیں۔
http://www.frittsykehusvalg.no/.

ناروے میں بہت ہی تھوڑے پرا ئیویٹ ہسپتال بھی ہیں۔ اگر آپ کسی پرا ئیویٹ ہسپتال کا انتخاب کریں تو علاج کےسارے اخراجات آپ کو خود ادا کرنے پڑیں گے۔

ہسپتال میں پولیکلینیکل علاج

پولیکلینیکل علاج کا مطلب ہے کہ ہسپتال میں آپ کا علاج تو ہوتا ہے لیکن آپ ہسپتال میں داخل نہیں ہوتے۔ آپ ایک مقررہ وقت پہ وہاں آتے ہیں اورعلاج کے بعد واپس گھر چلے جاتے ہیں۔ جب آپ کا پولیکلینیکل علاج ہوتا ہے تو آپ ذاتی حصّہ کی ادائیگی اپنےذاتی ڈاکٹریا سپیشلسٹ ڈاکٹر کی طرح ہی کرتے ہیں۔

سپیشلسٹ ڈاکٹر

ایک سپیشلسٹ ڈاکٹرجیسے گائناکالوجسٹ، ماہرامراضِ جِلد، کان، ناک اور گلہ کے امراض کا ماہر یا بچوں کے امراض کا ماہر ڈاکٹرہوتا ہے۔

ایک سپیشلسٹ ڈاکٹرکے پاس جانے کے لئے اپنے ذاتی ڈاکٹر یا کسی اورڈاکٹر کے حوالے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگرایسا حوالہ نہ ہو تو پھرذاتی حصّہ کی ادائیگی بہت زیادہ کرنی پڑ تی ہے۔

ایمبولینس

اگر آپ کو ایمبولینس کی ضرورت ہو تو آپ ہنگامی مدد کے ٹیلیفون (113) پر فون کر سکتے ہیں۔ اس سے ایمبولینس سنٹر
سے رابطہ ہو گا۔ یہ ضروری ہے کہ آپ درست معلومات دیں۔

آپ کون ہیں؟
(نام، ٹیلیفون نمبر، کہاں سے فون کر رہے ہیں)

کیا ہؤا ہے؟
(کتنےلوگ زخمی ہو ئے ہیں اور کیا شدید زخمی بھی ہیں)

آپ کہاں ہیں؟
پتہ یا جگہ کی درست وضاحت

ہنگامی طبی مدد

اگر ذاتی ڈاکٹر کے اوقات ِکار کےعلاوہ فوری طبّی مدد کی ضرورت ہو تو کمیون کے فوری طبّی امداد کے مرکز سے رابطہ کیا جا سکتا ہے (117 116)

ناروے میں تمام بلدیات میں فوری طبی امداد کا انتظام ہے۔ فوری طبی امدد کے مراکز شام، رات اورہفتہ اتوار کو بھی کھْلے ہوتے ہیں جب دوسرے ڈاکٹروں کے دفاتر بند ہوتےہیں۔

جب آدمی لیگے واکت/ فوری طبی امداد کے مرکز میں جاتا ہے توعلاج کے لئے ذاتی حصّہ کی ادائیگی کرتا ہے۔ٹیسٹ اور دوسری استعمال کی چیزوں کےاخراجات اس کے علاوہ ہوتے ہیں۔

آپ کو اپنے قریبی لیگے واکت/ فوری طبی امدد کے مرکز کا پتہ ہونا چاہیے!

حقائق

ذاتی حصّہ

  • ڈاکٹرکے پاس جانے کے اخراجات کے زیادہ حصے کی ادائیگی سرکاری ہوتی ہے۔
  • مریض صرف ذاتی حصے کی ادائیگی کرتے ہیں، باقی ادائیگی ریاست کرتی ہے۔
  • ذاتی حصے کے علاوہ مریض پٹیوں، ٹیکوں، دوائیوں ا ورمعائنوں کی ادائیگی کرتے ہیں ۔ ۔ سولہ سال سے کم عمر کے بچے ذاتی حصے کی ادائیگی نہیں کرتے۔
  • حمل کے دوران معائنے بھی مفت ہوتے ہیں۔ ذاتی ڈاکٹرکے پاس جانے کے لیے ذاتی حصے کی ایک بار کی ادائیگی عموما ً 150سے 300 کرونر ہوتی ہے۔

فری کارڈ

جب آپ ایک سال میں ذاتی حصے کی مقرّرہ حد کی ادائیگی کرپاتے ہیں پھر آپ فری کارڈ کے حقدار ہو جاتے ہیں۔ جب آپ ذاتی حصے کی
سے آپ کو ڈاک میں فری کار ڈ مل جاتا ہے۔ محکمہ صحت کے انتظامی ادارے HELFO اس رقم کی ادائیگی کرپاتے ہیں تو جب آپ ڈاکٹرکے پاس جا‎ ئیں یا نیلی رسید سے دوائی خریدیں تو یہ کارڈ د کھا ئیں۔ پھر آپ کو باقی اس سال میں ذاتی حصے کی ادائیگی نہیں کرنی پڑتی۔
helfo.no/frikort-for-helsetjenester-egenandelstak-1

پر ذاتی ڈاکٹروںکی لسٹ موجود ہے۔ آپ اس لسٹ سے ذاتی ڈاکٹرکا انتخاب کر سکتے ہیں۔ https://helsenorge.no