روزگار کی زندگی

تاریخی ترقی

ناروے میں 150سال پہلے زراعت، جنگلات اور ماہی گیری اہم کاروبار تھے۔ اْس دور سے آج تک بہت تبدیلی آئی ہے۔ 1800کے آخر میں کارخانے لگائے گئے اور بہت سے لوگوں نے شہروں میں منتقل ہو کر کارخانوں میں کام شروع کردیا۔ 1900 کے پہلے نصف حصے میں صنعتوں کے روزگار میں بہت اضافہ ہؤا۔ اس کے ساتھ ہی بہت سے نارویجن USA ریاستہائے متحدہ امریکہ چلے گئے اوروہاں جا کر آباد ہو گئے۔

1950 میں آبادی کا 20 فیصد زراعت میں کام کرتا تھا آج یہ شرح کم ہو کر صرف تین فیصد رہ گئی ہے۔ اس کے باوجود ناروے میں پہلے سے زیادہ خوراک کی پیداوار ہوتی ہے۔ اس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ آج ہمارے پاس مشینیں ہیں جن کے استعمال سے زراعت کا کام آسان اور زیادہ مؤثر ہو گیا ہے۔

پچھلے 30 سالوں میں ناروے کی روزگار کی منڈی میں پھر بہت بڑی تبدیلیاں آئی ہیں۔ اورباتوں کےعلاوہ کارخانوں میں کام کرنے والوں کی تعداد میں شدید کمی ہوئی ہے۔

1960 کی دہائی کے آخرمیں شمالی سمندرمیں تیل کی دریافت کے بعد تیل اور گیس کی پیداوار نارویجن صنعت کا ایک اہم حصّہ بن گئی ہے۔ تیل اور گیس نارویجن صنعت کے لئے بہت اہمیت کے حامل رہے ہیں۔ یہ ناروے کے لئے ویسی ہی اہمیت کے حامل ہوں گے اگرچہ مستقبل میں ماحولیاتی مشکلات کی وجہ سے ایک سبز تبدیلی پر بھی توجہ مرکوز ہو گی۔

آج روزگار کے زیادہ مواقع سروسز /خدمات والے پیشوں میں ہیں۔ اس کا مطلب ہے کہ اگر کسی کو ناروے میں کام کرنا ہو تو اس کے لئے مثال کے طور پر محکمہ صحت، سکول، نرسری یا ٹرانسپورٹ میں کام کے اچھے امکانات ہیں۔ بہت سے لوگوں کے لئے نئی انفارمیشن ٹیکنالوجی کی ترقی سے وابسطہ پیشوں میں بھی روزگار کے مواقع ہیں۔