روزگار کی زندگی

کالا/غیر قانونی کام

کالا کام غیر قانونی ہے۔ آجر اور ملازم دونوں کو کالے کام کی صورت میں معاشی جرم کی سزا دی جا سکتی ہے۔

کالا کام غیراخلاقی ہے۔ ایک ملازم جو ٹیکس ادا نہیں کرتا وہ شراکت میں اپنا حصّہ ادا نہیں کرتا۔ اس طرح کالا کام کرنے کا مطلب معاشرے میں دوسروں کی چوری کرناہے۔

ہر سال کالے کام کی وجہ سے ریاست ٹیکس، آجروں کے محصولات اور قومی بیمہ کے محصولات میں لاکھوں کروڑوں کی آمدن سے محروم رہتی ہے۔ یہ وہ پیسے ہیں جو فلاحی معاشرے کےاستعمال میں آ سکتے تھے۔

کالا کام غیر قانونی اورغیراخلاقی ہونےکےعلاوہ ملازم کے لئے بہت سے معاشی اور دوسرے نتائج کا با عث بھی بنتا ہے:

  • بیماری کے دوران تنخواہ نہیں مِلتی
  • چھْٹیوں کا الاؤنس نہیں ملتا
  • پنشن کے پوائنٹ نہیں بنتے
  • بے روزگاری کی صورت میں بے روزگاری الاؤنس نہیں ملتا
  • ملازمت پر حادثے کا بیمہ/انشورنس نہیں ہوتی
  • بینک سے قرض لینا ممکن نہیں ہوتا
  • کام کا معاہدہ نہیں ہوتا – کام چھوڑنے کا تصدیق نامہ نہیں ہوتا – کام کے تجربے کا تحریری ثبوت نہیں ہوتا – نیا کام ڈھونڈنا مشکل ہوتا ہے

حقائق

کالا کام غیر اخلاقی اور غیر قانونی ہے!

کالا کام کرنے کا مطلب ہے کہ معاہدے کے بغیر اور ٹیکس ادا کئے بغیر کام کرنا۔ آجر بھی اپنے محصولات کی ادائیگی نہیں کرتا اور نہ ہی قومی بیمہ میں ملازم کے حصّہ کی ادائیگی کرتا ہے۔