تعلیم اورقابلیت

اعلٰی تعلیم

På forelesning

ثانوی تعلیم کے بعد طلباء یونیورسٹی یا کالج میں اعلٰی تعلیم جاری رکھ سکتے ہیں۔

اکثر یونیورسٹیاں اور کالج سرکاری ہیں اور طلباء کے لئے تعلیم مفت ہے ۔ اخراجات کی ادائیگی سرکاری کھاتے سےہوتی ہے۔ اس کے باوجود طلباء عموماً کچھ سمسٹر فیس یا پڑھائی کے اخراجات ادا کرتے ہیں۔ پرائیویٹ کالج بھی ہیں۔ ان میں طلباء پڑھائی کے لئے اپنے ذاتی حصے کی ادائیگی کرتے ہیں۔

سرکاری کالجوں اور یْونیورسٹیوں کے اخراجات سرکاری ادائیگی سے ہوتے ہیں اور لوگوں کے لئے تعلیم مفت ہے۔ لیکن دونوں سرکاری اور نجی اداروں میں طلباء کو پڑھائی کے لئے مواد کا ا نتظام خود کرنا ہوتا ہے۔اس کا مطلب یہ ہے کہ درسی کتابیں اور دوسرا سامان انہیں خود خریدنا ہوتا ہے۔

اگر چہ یونیورسٹیاں اور کالج مفت ہیں پھر بھی پڑھائی کے دوران انسان کو دوسرے اخراجات کے لئے پیسوں کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس لئے یہ عام ہے کہ پڑھائی کے دوران رہائش کے کرائے ، خوراک اور دوسرے ضروری اخراجات کے لئے طلباء قرضہ فنڈ سے قرض لیتے ہیں۔ اس طرح سبھی اگر چاہیں تو خاندان کی آمدنی کی محتاجی کے بغیر اعلیٰتعلیم حاصل کر سکتے ہیں۔ بہت سے طلباء پڑھائی کے ساتھ زیادہ پیسوں کے حصول کے لئے کام بھی کرتے ہیں۔

مساوی تعلیمی مواقع

ایک جدید معاشرہ روزگار کے وافرمواقع، ٹیکنالوجی، پیداوار اور اختراع کا محتاج ہوتا ہے۔ اس لئے ناروے کو اعلٰی تعلیم یافتہ لوگوں کی ضرورت ہے۔ اس کے لئے سرکاری تعاون کی کئی صورتوں میں سے ایک سب کے لئے مساوی تعلیمی مواقع کا انتظام ہے۔

آج نارویجن بالغ افراد کا تقر یباً 27 فیصد اعلیٰتعلیم یافتہ ہے۔ زیادہ سے زیادہ نوجوان اعلیٰتعلیم حاصل کرتے ہیں اور ناروے میں تعلیم کا معیار مسلسل بلند ہو رہا ہے۔ آج طلباء کی تعداد میں 60 فیصد سے زیادہ خواتین ہیں اور عام طور پر عورتوں کا تعلیمی معیارمردوں سے کچھ بلند ہے۔

تمام طلباء جو ثانوی تعلیم اچھی حیثیت میں پاس کر یں وہ کالجوں یا یو نیورسٹیوں میں اعلٰی تعلیم کے لئے درخواست دے سکتے ہیں۔
کالجوں اور یونیورسٹیوں کے داخلے کا انتظام کرتا ہے۔ Samordna opptak

Samordna opptak

حقائق

قرضہ فنڈ

قرضہ فنڈ ناروے میں اور ناروے سے باہر پڑھنے والے طلباء کو وظیفہ اور قرضہ دیتا ہے۔

قرضہ فنڈ کا مقصد ایسی معاونت ہے جس کا مقصد

  • عدمِ مساوات کو ختم کر کے برابری کو یوں فروغ دینا کہ تمام لوگ جغرافیائی تعلق، عمر ،جنس اور معاشی یا سماجی صورتِحال کی تفریق کے بغیرتعلیم حاصل کر سکیں
  • یہ کہ تعلیم کا حصول کام کےاطمینان بخش ماحول میں موثّر طور پر ہو سکے اور معاشرے میں تعلیم یافتہ افرادی قوّت کی رسائی کو ممکن بنانا۔

بالغ افراد پرائمری اور ثانوی تعلیم کے لئے بھی وظیفہ/قرضہ کی درخواست دے سکتے ہیں۔